Awaz The Voice
Awaz The Voice

جو 2019 ورلڈ کپ کے دوران ہوا وہ اب نہیں ہونا چاہیے: راشد خان

  • 33d
  • 0 views
  • 3 shares

جو 2019 ورلڈ کپ کے دوران ہوا وہ اب نہیں ہونا چاہیے: راشد خان

دبئی : افغانستان کے مایہ ناز لیگ سپنر راشد خان نے پاکستان اور افغانستان کے کرکٹ شائقین سے درخواست کی ہے کہ وہ جمعے کو ٹی20 ورلڈ کپ میں دونوں ممالک کے میچ کے دوران شائستگی کا مظاہرہ کریں۔ اس سے قبل انگلینڈ میں کھیلے گئے پاکستان اور افغانستان کے ورلڈ کپ میچ کے بعد پاکستانی اور افغان تماشائیوں کے درمیان لڑائی جھگڑے کے کئی واقعات رونما ہوئے تھے۔ راشد خان 2019 میں ہیڈنگلے میں کھیلے گئے 50 اوور کے اُس ورلڈ کپ میچ کا حصہ تھے۔ اس میچ میں راشد خان کی ٹیم کو اگرچہ شکست کا سامنا کرنا پڑا تاہم میدان کے اندر اور میدان کے باہر ہونے والے تشدد کے واقعات میچ کے نتیجے پر چھائے رہے۔

اس دوران کھلاڑیوں کو سکیورٹی حصار میں گراؤنڈ سے باہر لے جایا گیا کیونکہ تماشائی حفاظتی جنگلے پار کر کے پچ تک جاپہنچے تھے۔ جمعے کے روز ہونے والا میچ بھی اعصاب شکن ہوسکتا ہے کیونکہ دونوں ٹیمیں اب تک ایونٹ میں ناقابل شکست ہیں اور سیمی فائنل میں جگہ بنانے کے لیے تگ و دو کررہی ہیں۔ ویک اینڈ کی وجہ سے متحدہ عرب امارات میں مقیم پاکستان اور افغانستان کے تارکین وطن تماشائیوں کی بڑی تعداد میں آمد متوقع ہے۔

راشد خان نے جمعرات کو گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ 'یقیناً پاکستان کے خلاف بہت اچھا میچ ہوتا ہے، لیکن اسے کھیل تک ہی محدود رکھنا چاہیے۔'

'میں تمام تماشائیوں سے گزارش کروں گا کہ وہ پرسکون رہیں اور کھیل سے لطف اندوز ہوں۔ جو کچھ 2019 کے میچ میں ہوا وہ دوبارہ نہیں ہونا چاہیے۔'

راشد خان اور مجیب الرحمان کی عمدہ بولنگ کی بدولت افغانستان نے ٹی20 ورلڈ کے اپنے پہلے میچ میں سکاٹ لینڈ کو بآسانی 130 رنز کے بڑے ہدف سے ہرا دیا تھا۔ افغانستان کی ٹیم نے اس میچ میں پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے سکاٹ لینڈ کو 191 رنز کا بڑا ہدف دیا تھا جبکہ جواب میں سکاٹ لینڈ کی ٹیم صرف 60 رنز پر ڈھیر ہوگئی تھی۔ اس میچ میں راشد خان نے چار جبکہ ان کے ساتھی سپنر مجیب الرحمان نے پانچ کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا تھا۔

افغانستان کی ٹیم پابندی کے خطرے کے سائے میں یہ ٹورنامنٹ کھیلنے آئی ہے کیونکہ ان کے ملک میں طالبان نے خواتین کی کھیلوں پر سخت موقف اپنا رکھا ہے۔

#Tags ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ


Dailyhunt

مزید پڑھیں
سیاست
سیاست

'2025 تک ٹی بی سے پاک ہندوستان کیلئے ٹی بی ویکسین کاتجربہ جاری'

'2025 تک ٹی بی سے پاک ہندوستان کیلئے ٹی بی ویکسین کاتجربہ جاری'
  • 55m
  • 0 views
  • 0 shares

نئی دہلی: حکومت نے آج ایوان بالا راجیہ سبھا میں کہا کہ وہ سال 2025 تک ہندوستان کو تپ دق (ٹی بی) سے پاک بنانے کے ہدف کے ساتھ کام کر رہی ہے اور اسی سلسلے میں اس کی ویکسین کی آزمائش کا تیسرا مرحلہ چل رہا ہے اور اسکی جلد ہی آنے کی امید ہے ۔مرکزی صحت اور خاندانی بہبود کے وزیر من سکھ مانڈویہ نے آج وقفہ سوالات کے دوران ضمنی سوالات کے جواب میں یہ جانکاری دی۔ انہوں نے کہا کہ کورونا ٹسٹ کے دوران ٹی بی ٹسٹ میں کچھ کمی آئی تھی لیکن اب اس معاملے میں صورتحال معمول پر آ گئی ہے ۔انہوں نے کہا کہ اس سال اب تک 18 لاکھ ٹسٹ ہوچکے ہیں اور لوگوں میں بیداری پیدا کرنے کی بھی کوشش کی جارہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ دیسی کمپنی ٹی بی کی ویکسین کا تجربہ کر رہی ہے ۔ تجربہ کا تیسرا مرحلہ جاری ہے اور اسی رپورٹ کی بنیاد پر اس کو لگائے جانے سے متعلق فیصلہ کیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی نے سال 2025 تک ملک کو ٹی بی سے پاک بنانے کا ہدف رکھا ہے اور اس کے مطابق کام جاری ہے ۔ اس سلسلے میں ریاستوں سے بھی اپیل کی گئی ہے ۔ اور انہیں ٹی بی سے پاک رہنے کے لیے پروگرام بنانے کا مشورہ دیا گیا ہے ۔وزیر نے بتایا کہ لکشدیپ اور جموں و کشمیر کے دو اضلاع کو ٹی بی سے پاک قرار دیا گیا ہے ۔ اسی طرح پورے ملک کو ٹی بی سے پاک بنانے کی کوششیں جاری ہیں۔

Dailyhunt

مزید پڑھیں
سیاست
سیاست

خاتون ارکان پارلیمنٹ کیساتھ تھرور کی سیلفی فحش:پورندیشوری

خاتون ارکان پارلیمنٹ کیساتھ تھرور کی سیلفی فحش:پورندیشوری
  • 57m
  • 0 views
  • 0 shares

تھرواننتا پورم: کانگریس قائد ششی تھرور خاتون ارکان پارلیمان کے ساتھ اپنی سیلفی کیلئے اس وقت سرخیوں میں ہیں۔ا س تصویر پر لوگوں کے ردعمل آرہے ہیں۔ ان ہی میں سے ایک ہیں بی جے پی کی قومی جنرل سکریٹری دگوباتی پورندیشوری ، جنہوں نے اسے فحش قرار دیا ہے۔ پورندیشوری نے ٹوئٹر پر لکھا ہیکہ لوک سبھا ایک مقدس جگہ ہے ، جہاں عوامی امور پر بحث کی جاتی ہے ۔ یہ افسوسناک ہے کہ ششی تھرور لوک سبھاکو اس لئے پرکشش مانتے ہیں کیونکہ یہاں خاتون اراکین ہیں۔ یہ فحش ہے اور یہ جمہوریت کے سب سے بڑے ایوان کے احترام کم کرنے کے مترادف ہے ۔ تھرواننتا پورم لوک سبھاحلقہ کی نمائندگی کرنے والے تھرور پیر کو اس وقت سوالا ت کے گھیرے میں آگئے جب انہوں نے ٹوئٹر پر پارلیمنٹ کے سرمائی اجلاس کے پہلے دن چھ خواتین اراکین پارلیمنٹ کے ساتھ لی گئی ایک سیلفی کو سوشل میڈیا پر شیئر کیا تھا۔سیلفی کے ساتھ دیئے گئے کیپشن نے بھی لوگوں کی توجہ مبذول کی جس میں تھرو ر نے لکھا تھا کہ کون کہتا ہیکہ لوک سبھا کام کرنے کیلئے پرکشش جگہ نہیں ہے؟ اس تصویر میں تھرور 'سپریہ سولے ، پرنیت کور، تمی جاچی، ممی چکرورتی، نصرت جہاں اور جیوتی منی کے درمیان نظر آرہے ہیں۔

Dailyhunt

مزید پڑھیں

No Internet connection