DW (Urdu)
DW (Urdu)

'چین کا ہائپرسونک میزائل تجربہ سپوتنک جیسا لمحہ تھا'

'چین کا ہائپرسونک میزائل تجربہ سپوتنک جیسا لمحہ تھا'
  • 92d
  • 00

امریکی فوج کے سربراہ نے چین کے جوہری صلاحیت کے حامل ہائپرسونک میزائل کے مبینہ تجربے پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے اس تجربے کا موازنہ سرد جنگ کے زمانے میں سابقہ سوویت یونین کے 'سپوتنک' تجربے سے کیا۔امریکی جوائنٹ چیفس آف اسٹاف کے چیئرمین جنرل مارک ملی نے چین کے ہائپرسونک میزائل تجربے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ بیجنگ نے ہائپر سونک ہتھیاروں کے سسٹم میں اہم پیش رفت کرلی ہے اور امریکا کے لیے اس کا مقابلہ کرنا مشکل ہوگا۔ مارک ملی چین کے کامیاب تجربے کی تصدیق کرنے والے پینٹاگون کے پہلے اعلی ترین عہدیدار ہیں۔ انہوں نے بلوم برگ ٹی وی سے بات چیت کرتے ہوئے کہا،”ہم نے جو دیکھا وہ ہائپرسونک ہتھیاروں کے نظام کے ٹیسٹ کا ایک بہت اہم واقعہ تھا اور یہ بہت ہی تشویش ناک ہے۔" امریکا کے فوجی سربراہ نے چین کے ہائپر سونک میزائل کے تجربے کا موازنہ سرد جنگ کے دوران خلائی دوڑ میں سوویت یونین کے سبقت حاصل کرلینے سے کیا۔ جنرل مارک ملی کا کہنا تھا،”مجھے نہیں معلوم کہ یہ واقعی سپوتنک جیسا لمحہ تھا، لیکن میں سمجھتا ہوں کہ یہ اس کے انتہائی قریب تر تھا۔" سوویت یونین نے سن 1957میں دنیا کے پہلے سیٹیلائٹ سپوتنک کو خلاء میں بھیج کر امریکا کو حیرت زدہ کردیا تھا۔ اس پیش رفت کے بعد ہتھیاروں کی بڑھتی ہوئی دوڑ میں امریکا کو تکنیکی طورپر پیچھے رہ جانے کا خدشہ پیدا ہوگیا تھا۔ ہائپرسونک ہتھیار اتنے اہم کیوں ہیں؟ جنرل مارک ملی نے چین کے ہائپر سونک میزائل کے تجربے کی تصدیق اب کی ہے۔ حالانکہ برطانوی اخبار فائنانشیل ٹائمزنے جولائی میں ہی خبر شائع کی تھی کہ چینی فوج نے جوہری صلاحیت والے ہائپر سونک ہتھیاروں کا تجربہ کیا ہے۔ اخبار نے لکھا تھا کہ اس تجربے نے واشنگٹن کو حیران کردیا تھا۔ فائناننشل ٹائمز کے مطابق میزائل نے کم اونچائی اور آواز کی رفتار سے پانچ گنا زیادہ رفتار سے زمین کے گرد چکر لگایا۔ تاہم اس کا ہدف محض 30 کلومیٹر دور رہ گیا تھا۔ ہائپر سونک میزائل کی خوبی یہ ہے کہ وہ نہ صرف آواز سے پانچ گنا سے زیادہ تیز رفتار سے سفر کرتا ہے بلکہ اس کا پتہ لگانا اور اسے روکنا بھی زیادہ مشکل ہے۔ مستقبل کی جنگی صلاحیتوں کے حوالے سے ا س یکنالوجی پر سب سے زیادہ تیزی سے کام ہورہا ہے اور ہتھیاروں کی اس نئی دوڑ میں چین کی پیش رفت کی خبروں نے امریکا کی پریشانیاں بڑھا دی ہیں۔ امریکا بھی ہائپرسونک ہتھیاروں پرکام کررہا ہے تاہم جنرل ملی کے مطابق چین جس میعار کو حاصل کرچکا ہے اس میعار کا کوئی تجربہ امریکا ابھی تک نہیں کرسکا ہے۔ جنرل ملی کا کہنا تھا،”یہ انتہائی اہم تکنیکی واقعہ ہوا ہے...اوراس نے ہماری توجہ اپنی جانب مبذول کی ہے۔" حالانکہ چین نے اس رپورٹ کی تردید کرتے ہوئے کہا تھا کہ یہ دوبارہ قابل استعمال کی جانے والی خلائی گاڑی کا معمول کا تجربہ تھا۔ امن کو لاحق خطرات امریکا، روس اور شمالی کوریا ہائپر سونک ٹیکنالوجی کا تجربہ کرچکے ہیں تاہم چین نے اس سال کے اوائل میں جو تجربہ کیا تھا اس کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ وہ طویل دوری کا تجربہ تھا۔ واشنگٹن اور بیجنگ کے درمیان حالیہ برسوں میں تعلقات مزید کشیدہ ہوئے ہیں۔ چین بحرالکاہل خطے میں اپنا اثر و رسوخ بڑھانے کی مسلسل کوشش کر رہا ہے جسے امریکا اور اس کے اتحاد ی اپنے لیے خطرہ محسوس کرتے ہیں۔ پنٹاگون کے ترجمان جان کربی نے چین کے ہائپر سونک تجربات کے بارے میں بدھ کے روز پوچھے جانے پر اس کی تصدیق کرنے سے انکار کردیا۔ تاہم انہوں نے کہا کہ چین کی فوجی صلاحیتوں میں کوئی بھی بڑی پیش رفت”خطے اور اس سے باہر کشیدگی کو کم کرنے میں بہت کم مدد کرتی ہے۔" ج ا/ ص ز (اے پی، اے ایف پی، روئٹرز)

مزید پڑھیں
Awaz The Voice
Awaz The Voice

بچھڑے بھائی سےملاقات کے لیے سکا خان کو ملا پاکستان کا ویزہ

بچھڑے بھائی سےملاقات کے لیے سکا خان کو ملا پاکستان کا ویزہ
  • 6m
  • 00

بچھڑے بھائی سےملاقات کے لیے سکا خان کو ملا پاکستان کا ویزہ

نئی دہلی : ہندوستان میں پاکستان کے ہائی کمیشن نے محمد حبیب عرف سکا خان کو بھائی اور اہل خانہ سے ملاقات کے لیے ویزہ جاری کردیا ہے۔یاد رہے کہ دونوں پڑوسی ممالک کے درمیان سیاسی اور سفارتی تناو نے باہمی تعلقات متاثر ہوئے ہیں۔مگر یہ ایک ایسا واقعہ ہے جس نے پاکستان کو ایک بڑا قدم اٹھانے پر مجبور کردیا۔ سکہ خان اور محمد صدیق دونوں سگے بھائی ہیں جو تقسیم برصغیر کے موقع پر 1947 میں بچھڑ گئے تھے۔ دونوں بھائی کچھ عرصہ قبل کرتارپور میں ملے تو ان کی گذشتہ ملاقات کو 74 برس کا طویل عرصہ بیت چکا تھا۔

نئی دہلی میں پاکستان کے ہائی کمیشن کی جانب سے جاری کردہ بیان کے مطابق ویزے کا اجرا جمعہ کو کیا گیا ہے۔اس کا مقصد یہی ہے کہ دونوں بھائی برسوں بلکہ دہائیوں کے بعد ایک دوسرے کے ساتھ سکون سے وقت گزار سکیں۔جن کے کرتار پور میں گلے مل کر پھوٹ پھوٹ کر روتے ہوئے تصاویر نے دونوں ممالک میں کروڑوں افراد کو جذباتی کردیا تھا۔

پاکستان ہائی کمیشن کی جانب سے سکہ خان کی ایک ویڈیو بھی جاری کی گئی ہے جس میں وہ ویزہ جاری ہونے پر خوشی کا اظہار کر رہے ہیں۔ ویڈیو میں سکہ خان کہہ رہے ہیں کہ 'ویزہ مل گیا، میں بہت خوش ہوں۔ جا کر ملوں گا، شکریہ کہتا ہوں سب کو۔ اس کا شکریہ جس نے مجھے بھائیوں کے پاس بھیج دیا ہے۔

اس سے قبل سکہ خان نے عرب نیوز کو دیے اپنے حالیہ انٹرویو میں پاکستان جانے کی خواہش کا اظہار کیا تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ 'میرے لیے میرا گاؤں ہی میرا خاندان ہے۔ اب میں پاکستان جانا چاہتا ہوں اور اپنے بھائی کے ساتھ کچھ وقت گزارنا چاہتا ہوں۔ مجھے امید ہے کہ پاکستان حکومت مجھے ویزہ جاری کر دے گی۔

سکہ خان 1947 میں اپنے والد اور بڑے بھائی سے اس وقت بچھڑ گئے تھے جب ان کے والد اور بھائی کو پھولے والا گاؤں جو بھارت کا حصہ بن گیا تھا کو چھوڑنا پڑ گیا تھا۔ اس وقت سکہ خان کی عمر صرف دو برس تھی جب وہ اپنی والدہ کے ساتھ وہیں رہ گئے تھے۔ بعد میں ان کی والدہ نے اپنے شوہر یعنی سکہ خان کے والد کی موت کا سن کر خودکشی کر لی تھی۔

مزید پڑھیں : کیسے ملے دو بچھڑے ہوئے بھائی کرتار پور میں

ہائی کمیشن کے مطابق ویزہ جاری کرنے کا مقصد یہ ہے کہ سکہ خان اپنے بھائی محمد صدیق اور دیگر اہل خانہ سے ملاقات کے لیے پاکستان آسکیں۔

مزید پڑھیں
Urdu Leaks
Urdu Leaks

تلنگانہ اردو ٹرینڈ ٹیچرس اسوسی ایشن پداپلی کے کیلنڈر کی رسم اجرائی

تلنگانہ اردو ٹرینڈ ٹیچرس اسوسی ایشن پداپلی کے کیلنڈر کی رسم اجرائی
  • 9m
  • 00

تلنگانہ اردو ٹرینڈ ٹیچرس اسوسی ایشن پداپلی کی جانب سے سال نو کا کیلنڈر ضلع اقلیتی بہبود آفسر معراج محمود کے ہاتھوں رسم اجرا عمل میں آیا ہے اس موقعہ پر بات کرتے ہوئے مفتی محمد استقام الدین صدر اردو ٹرینڈ ٹیچرس اسوسی ایشن پداپلی نے کہا کہ ترقی و کامیابی کے لئے وقت کی قدر اور اس کا صحیح استعمال کرنا ضروری ہے اس موقعہ پر تلنگانہ اردو ٹرینڈ ٹیچرس اسوسی ایشن کے ذمہ داران انیسہ بیگم و دیگر موجود تھے

مزید پڑھیں

No Internet connection