DW (Urdu)
DW (Urdu)

تیونس: صدر کے سیاسی حریف کے ٹی وی چینل پر پابندی عائد

تیونس: صدر کے سیاسی حریف کے ٹی وی چینل پر پابندی عائد
  • 92d
  • 00

تیونس میں میڈیا پر نظر رکھنے والے ادارے نے صدر کے سیاسی حریف کی ملکیت والے ٹی وی چینل کو بند کر دیا ہے۔ صدر قیس سعید کی انتظامیہ نے ایک مذہبی ریڈیو اسٹیشن 'قرآن کریم' پر بھی پابندی لگا دی ہے۔تیونس میں ذرائع ابلاغ سے متعلق ریگولیٹری ادارے 'ایچ اے آئی سی اے' نے 27 اکتوبر بدھ کے روز اعلان کیا کہ اس نے 'نسمہ' ٹی وی چینل اور ایک مذہبی ریڈیو اسٹیشن 'قرآن کریم' کو بند کر دیا ہے۔ نسمہ ٹی وی کے مالک نبیل کروی ملکی صدر قیس سعید کے سیاسی حریف ہیں، جو فی الوقت الجیریا میں حراست میں ہیں۔ ایچ اے آئی سی اے کا کہنا ہے کہ دونوں ہی اسٹیشن بغیر لائسنس کے کام کر رہے تھے، حالانکہ یہ بھی درست ہے کہ دونوں کے پاس لائسنس گزشتہ تقریبا ًایک برس سے نہیں تھا۔ آزادی صحافت کے لیے خطرہ میڈیا پر نظر رکھنے والے اداروں نے قیس سعید کے اقتدار میں آنے سے پہلے ہی یہ شکایت کی تھی کہ نسمہ ٹی وی اور قرآن کریم ریڈیو اسٹیشن کا استعمال سیاسی اثر و رسوخ بڑھانے کے ذرائع کے طور پر ہوتا ہے۔ ادارے کا کہنا تھا، ''نسمہ سیاسی جماعت 'ہارٹ آف تیونس' کے ایک سرکردہ رہنما کی ملکیت ہے اور اس کے مواد سے بھی یہ بات جھلکتی تھی۔ اس نے آڈیو ویژوول مواصلات سے متعلق آزادانہ اصولوں کی خلاف ورزی کی تھی۔'' ادارے کا کہنا ہے کہ اس نے نیسما ٹی وی کے اسٹوڈیوز اور نشریات سے متعلق اس کا تمام ساز و سامان ضبط کر لیا ہے۔ قرآن کریم ریڈیو اسٹیشن کے مالک رکن پارلیمان سعید جزیری ہیں جن کا تعلق الرحمہ پارٹی سے ہے۔ نبیل کروی کو ماہ ستمبر میں الجیریا میں اس الزام کے تحت گرفتار کیا گیا تھا کہ وہ ملک میں غیر قانونی طور پر داخل ہوئے تھے۔ سن 2019 کے صدارتی انتخابات میں نیبیل کروی 'ہارٹ آف تیونس پارٹی' کے رہنما کے طور پر صدارتی امید وار تھے۔ وہ اسلام پسند جماعت النہضہ سے بھی منسلک ہیں تاہم ان کا سیاسی ایجنڈا سخت گیر اسلام کی مخالفت اور غربت کے خلاف جنگ پر مرکوز تھا۔ سن 2017 سے ہی تیونس کی حکومت نے نبیل کروی کے خلاف منی لانڈرنگ اور ٹیکس چوری کے الزام کے تحت کئی مقدمات دائر کر رکھے ہیں۔ 2019 میں انہیں ایک ماہ سے زیادہ قید میں بھی رکھا گیا تھا اور اس کے بعد دسمبر 2020 سے جون 2021 تک وہ ریمانڈ پر بھی تھے۔ صدر کے ناقدین دونوں چینلوں کو بند کرنے کے اقدام کو تیونس میں آزادی صحافت کے لیے خطرہ قرار دے رہے ہیں۔ بد نظمی کی شکار جمہوریت گزشتہ ماہ صدر قیس سعید نے ملک پر صدارتی فرمان کے ذریعے حکمرانی کرنے کا اعلان کرتے ہوئے اقتدار پر اپنی گرفت مزید مضبوط کر لی ہے۔ اس اعلان میں کہا گیا تھا کہ وہ اپنے فرمان کے ذریعے ملک پر حکومت کریں گے۔ اس کے مطابق ارکان پارلیمان کو جو مراعات اور ان کے خلاف قانونی چارہ جوئی سے جو استثنیٰ حاصل تھا اسے بھی واپس لے لیا گیا ہے۔ اس سے قبل انہوں نے 25 جولائی کو وزیر اعظم ہشام مشیشی کو ان کے عہدے سے برطرف کرتے ہوئے حکومت کا خاتمہ کر دیا تھا اور ہنگامی طور پر تمام اختیارات اپنے ہاتھ میں لے لیے تھے۔ سعید قیس دعوی کیا تھا کہ ان کے یہ اقدامات ملک کی سلامتی کے لیے بہت اہم ہیں اور عوام کے حقوق کے تحفظ کے لیے آئین کے عین مطابق ہیں۔ صدر قیس سعید کی اقتدار پر اپنی گرفت مضبوط کرنے کی جو کوشش تھی اسے سیاسی جماعتوں نے مسترد کرتے ہوئے کہا تھا کہ وہ کبھی اسے تسلیم نہیں گریں گی۔ بعض جماعتوں نے ان کے اس اقدام کو بغاوت قرار دیا تھا۔ 'ہارٹ آف تیونس' نامی جماعت اور اپوزیشن پارٹی کے ایک رہنما اسامہ الخلیفی نے بھی قیس سعید پر ''منصوبہ بند بغاوت'' کرنے کا الزام عائد کیا تھا اور کہا تھا، ''ہم اس بغاوت کے خلاف قومی سطح پر صف بندی کی اپیل کرتے ہیں۔'' سن 2011 میں عرب بہاریہ کے بعد سے تیونس کا جمہوری سفر اچھا رہا ہے تاہم صدر قیس کے حالیہ اقدام سے جمہوری عمل کو دھچکا لگا ہے۔ ص ز / ج ا (اے ایف پی، روئٹرز)

مزید پڑھیں
معيشت
معيشت

حیدرآباد: ورلڈ ٹین پارلیمنٹ کے لئے ایم ایس کریٹیو کی 4طالبات منتخب

حیدرآباد: ورلڈ ٹین پارلیمنٹ کے لئے ایم ایس کریٹیو کی 4طالبات منتخب
  • 4m
  • 00

حیدرآباد- شیخ محمد یونس

کورونا کے اثرات اب آہستہ آہستہ دور ہورہے ہیں، ہر سطح پر سرگرمیاں تیز ہورہی ہیں ۔جن میں تعلیمی میدان بھی شامل ہے۔اب حیدرآباد سے ایک مثبت خبر آئی ہے۔ مسلم طالبات کی ایک بڑی کامیابی توجہ کا مرکز بنی ہے۔ دراصل یونیسکو کے تحت چلنے والے اس عالمی ٹین پارلیمنٹ میں یہ طالبات اب عالمی مسائل کے حل کے لیے پالیسی تیار کریں گی۔ان کی تجاویز کو عملی جامہ پہنا کر عالمی سطح پر انسانوں کو درپیش مسائل کو حل کیا جائے گا ۔ آج میں ایم ایس ایجوکیشن اکیڈمی کے سنیر ڈائرکٹر ڈاکٹر محمد معظم حسین نے اس کی جانکاردی۔جن کا کہنا ہے کہ یہ بچیاں دنیا میں ملک کا نجام روشن کریں گی۔یہ ہماری سوچ اور نظریئے کی کامیابی ہے جس کے تحت ہم انفرادی طور پر دنیا میں تبدیلی لانے کاسبق دیتے ہیں۔

ایم ایس طلبا کی اس قابل رشک کامیابی کی جانکاری دیتے ہوئے بتایا کہ یونیسکوکے تحت چلنے والے اس ورلڈ ٹین پارلیمنٹ کے لئے جن 100اراکین (ایم پی) کا انتخاب عمل میں آیا ہے ان میں سے 4 ایم پی ایم ایس کریٹیو اسکول کی طالبات ہیں۔

امینہ عزیز بنت محمد عزیز علی

عتیقہ عمودی بنت شیخ عبدالرحیم

ماریہ خالد ساچے بنت خالد ساچے

سمیرہ ام کلثوم بنت محمد رفیق

طالبات کو ایم ایس ایجوکیشن اکیڈمی میں اسقبالیہ دیا گیا


یہ چاروں دسویں جماعت کی طالبہ ہیں ۔ اس ورلڈ پارلیمنٹ کی ایم پی اے منتخب ہو جانے کے بعد اب طالبہ عالمی سطح پر انسانوں کی پریشانیوں کو دور کرنے کے لیے تجاویز اور سفارشات پیش کریں گی اس پارلیمنٹ کے اراکین کی تجاویز کو انسانوں کی فلاح و بہبود کے لئے ساری دنیا میں نفاذ کیا جائے گا۔

آج ایم ایس ایجوکیشن اکیڈمی کی طرف سے ان طلبا اور انکے والدین کو تہیت پیش کی گئی۔ اس موقع پر سنیر ڈائرکٹر ڈاکٹر محمد معظم حسین نے بتایا کہ ایم ایس ایجوکیشن اکیڈمی کا شروع سے ہی یہ ویزن رہا کہ اس کے طلبا عالمی معیار کے شہری بنیں اور اسی سبب سے ایم ایس ایجوکیشن اکیڈمی نےاپنا ٹیگ لائن

Preparing World Worthy Individual

رکھا ہے۔ اور یہ اسی ویزن کا نتیجہ ہے کی آج ایم ایس کی چار طالبہ نے عالمی ادارہ کی رکینت حاصل کر نے میں کامیابی پائی ہے۔ انہوں نے خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ان طالبات نے ملت کا نام روشن کردیا ہے۔

ایک منتخب طالبہ سمیرا ام کلثوم نے ''زندگی کو کیسے بہتر بنایا جائے'' کے موضوع پر ایک تجویز پیش کرتے ہوئے کہاکہ''دنیا کو بدلنے کے لیے ہمیں پہلے خود کو اندر سے بدلنا ہوگا۔ تب ہی ہم دنیا میں تبدیلی لا سکتے ہیں۔ اس نے مشورہ دیا کہ اپنے آپ کو اس طرح ڈھالیں کہ باہر کی دنیا آپ کو متاثر نہ کر سکے۔ آپ کی ذاتی ترقی اس ترقی کو لانے کے لیے کافی ہو سکتی ہے۔

چونکہ یہ عالمی پارلیمنٹ اقوام متحدہ کی ذیلی تنظیم یونیسکو کے ما تحت عمل میں آیا ہے۔ اس لیے اس کے تجاویز اور قوانین کا اطلاق ساری دنیا کے ممالک میں ہوگا اس ورلڈٹین پارلیمنٹ کے نومنتخب ان تمام ایم پی اپنے ایوان میں دنیا بھر کے ایشوز پر بحث و مباحثہ کریں گے اور ان کے مسائل کے حل کے لیے تجاویز پر تبادلہ خیال کریں گے۔ یہ تمام ایم پی اپنی تجاویز کے ‍ ذریعہ دنیا بھر میں انسانی زندگی کو آسان اور خوش حال بنائیں گے۔

چاروں طالبات ایم ایس ایجوکیشن اکیڈمی کے سنیر ڈائرکٹر ڈاکٹر محمد معظم حسین کے ساتھ


واضح رہے کہ اقوام متحدہ کی تعلیمی ،سائنٹیفیک اور کلچرل تنظیم یونیسکو کے تحت چلنے والے اس ورلڈ ٹین پارلیمنٹ کے اراکین کے انتخاب کے لیے دنیا بھر کے ممالک کے اسکولی طلبہ سے درخواست طلب کیا گیا تھا۔ اس کے لیے عالمی سطح پر یونیسکو کو 72,000 ہزار درخواستیں موصول ہوئی ۔ ان موصول درخواستوں میں سے پہلے راونڈ کے لئےتین سو طلباء کو بہترین تجاویز پیش کرنے پر انتخاب کیا گیا ۔ پھر دوسرے راونڈ میں آن لائن ووٹنگ کے ذریعے ان میں سے 100طلبا کو اس ورلڈ کپ پارلیمنٹ کے لئے انتخاب کیا گیا۔ جس کے نتائج اس ہفتہ جاری کیا گیا ۔

مزید پڑھیں
معيشت
معيشت

بجٹ اجلاس سے قبل اوم برلا نے کیا پارلیمنٹ ہاؤس کا معائنہ

بجٹ اجلاس سے قبل اوم برلا نے کیا پارلیمنٹ ہاؤس کا معائنہ
  • 4m
  • 00

ئی دہلی

اکتیس جنوری 2022 سے شروع ہونے والے پارلیمنٹ کے بجٹ اجلاس سے پہلے لوک سبھا کے اسپیکراوم برلا نے آج پارلیمنٹ ہاؤس کمپلیکس میں مختلف سہولیات کا معائنہ کیا۔

اوم برلا نے پارلیمنٹ ہاؤس کمپلیکس میں لوک سبھا چیمبر، سینٹرل ہال اور کئی دیگر سہولیات کا معائنہ کیا۔انہوں نے اپنے معائنہ کے دوران سیشن کے دوران اراکین، عہدیداروں اور میڈیا کی حفاظت کو یقینی بنانے کے لیے ضروری کووڈ ہدایات کا معائنہ کیا۔

انہیں سینئر حکام کی طرف سے پارلیمنٹ ہاؤس کمپلیکس میں کوویڈ پروٹوکول کے اصولوں کے نفاذ کے بارے میں آگاہ کیا گیا۔ شری برلا کو متعلقہ عہدیداروں نے نئے پارلیمنٹ ہاؤس (این پی بی) کی تعمیر کی پیش رفت کے بارے میں بھی بتایا۔

انہوں نے پارلیمنٹ کی نئی عمارت کے اردگرد عالمی معیار کی زمین کی تزئین کو یقینی بنانے کے لیے متعدد تجاویز دیں۔

اسپیکر نے عمارت کے تعمیراتی سامان اور تعمیراتی خصوصیات کے بارے میں بھی دریافت کیا۔

اوم برلا نے افسران کو ہدایت دی کہ موجودہ پارلیمنٹ ہاؤس کی دیکھ بھال کا باقاعدگی سے خیال رکھا جائے اور دستیاب سہولیات کو نئی ٹیکنالوجی کے ذریعے مزید موثر بنایا جائے۔

انہوں نے لوک سبھا اور راجیہ سبھا کے چیمبروں میں ارکان کے لئے مناسب حفاظتی اقدامات کرنے کی ہدایت دی۔ اپنے معائنہ کے دوران، شری برلا نے میڈیا سٹینڈ، لابی اور مرکزی ہال میں زیادہ سے زیادہ صفائی ستھرائی اور موثر سہولیات دستیاب کرنے کی ہدایت دی۔

مزید پڑھیں

No Internet connection