DW (Urdu)
DW (Urdu)

ایشیا کی تاریخ میں منشیات کی سب سے بڑی برآمدگی

  • 92d
  • 1 shares

لاؤس میں حکام نے براعظم ایشیا کی تاریخ میں منشیات کی آج تک کی سب سے بڑی مقدار ضبط کر لی۔ اقوام متحدہ کے مطابق پولیس نے تقریباﹰ چھپن ملین نشہ آور میتھ گولیوں اور ڈیڑھ ٹن سے زائد کرسٹل میتھ کو قبضے میں لے لیا۔تھائی لینڈ کے دارالحکومت بنکاک سے جمعرات اٹھائیس اکتوبر کو ملنے والی رپورٹوں کے مطابق یہ ایشیا میں کسی بھی کارروائی میں آج تک قبضے میں لیے گئے غیر قانونی نشہ آور مادوں کی سب سے بڑی مقدار ہے۔ اس امر کی اقوام متحدہ کے ایک اعلیٰ اہلکار نے بھی تصدیق کر دی۔ ڈارک نیٹ پر غیر قانونی تجارت: کئی ممالک میں چھاپے، گرفتاریاں یہ منشیات جنوبی مشرقی ایشیا کے مقابلتاﹰ بہت تھوڑی آبادی والے ملک لاؤس میں برآمد کی گئیں، جنہیں بیئر ٹرانسپورٹ کرنے والے ایک ٹرک میں چھپایا گیا تھا۔ ایشیا میں منشیات کی اسمگلنگ کا گیٹ وے لاؤس اقوام متحدہ کے منشیات اور جرائم کی روک تھام کے دفتر یو این او ڈی سی کے علاقائی نمائندے جیریمی ڈگلس نے بنکاک میں بتایا کہ یہ منشیات لاؤس میں بدھ ستائیس اکتوبر کو رات گئے پکڑی گئیں۔ ان میں 55.6 ملین میتھ گولیاں اور 1537 کلو گرام کرسٹل میتھ شامل ہیں۔ جرمنی میں گانجے اور کوکین کے استعمال میں اضافہ طالبان کے افغانستان میں، افیون کی قیمتیں آسمان پر جیریمی ڈگلس نے بتایا کہ حالیہ برسوں میں لاؤس ایشیا بالخصوص جنوب مشرقی ایشیا میں منشیات کی اسمگلنگ کے لیے گیٹ وے بن چکا ہے۔ خاص طور پر میانمار کی بدامنی کی شکار ریاست شان سے تھائی لینڈ اور اس سے بھی آگے دیگر ممالک تک منشیات کی اسمگلنگ کے لیے لاؤس کلیدی اہمیت کا حامل ملک ہے۔ بین الاقوامی منڈی میں مالیت کروڑوں ڈالر منشیات کی بین الاقوامی بلیک مارکیٹ میں قبضے میں لے لیے گئے ان نشہ آور مادوں کی مجموعی مالیت کروڑوں ڈالر بنتی ہے۔ لاؤس پولیس نے یہ منشیات ملک کے شمالی صوبے بوکیو میں ایک ایسے ٹرک سے برآمد کیں، جس پر بظاہر بیئر کے کریٹ لدے ہوئے تھے۔ لاؤس کے اس صوبے کی سرحدیں میانمار اور تھائی لینڈ دونوں سے ملتی ہیں۔ منشیات کی تیاری: ڈچ پولیس نے سب سے بڑی فیکٹری کا پتہ چلا لیا اقوام متحدہ کے منشیات اور جرائم کی روک تھام کے دفتر کے علاقائی نمائندے نے خبر رساں ادارے اے ایف پی کو بتایا کہ ان منشیات کی مقدار اتنی زیادہ ہے کہ یہ پچھلے پورے سال کے دوران لاؤس میں پکڑی گئی میتھ گولیوں کی تعداد کا تین گنا بنتی ہے۔ منشیات کا کاروبار: یونانی پادری کا سات بشپس پر تیزاب سے حملہ اس کے علاوہ جس تقریباﹰ 1540 کلو گرام کرسٹل میتھ کو بھی پولیس نے اپنے قبضے میں لے لیا، وہ لاؤس میں گزشتہ برس ضبط کی گئی کرسٹل میتھ کی مقدار کے تقریباﹰ ایک تہائی کے برابر ہے۔ پولیس نے ان منشیات کو قبضے میں لینے کے علاوہ دو افراد کو گرفتار بھی کر لیا۔ منشیات کی 'سنہری مثلث‘ لاؤس میں جس علاقے سے پولیس نے یہ منشیات برآمد کیں، وہ اس خطے میں تین ممالک کی سرحدیں آپس میں ملنے اور منشیات کی بہت زیادہ اسمگلنگ کی وجہ سے 'سنہری مثلث‘ کہلاتا ہے۔ اسی 'گولڈن ٹرائی اینگل‘ کے راستے ہر سال مجموعی طور پر کیمیائی طور پر تیار کردہ اربوں ڈالر مالیت کی منشیات اسمگل کی جاتی ہیں۔ پاکستانی نوجوانوں میں کرسٹل میتھ کے استعمال میں اضافہ کیوں؟ اے ایف پی نے لکھا ہے کہ لاؤس میں اتنی بڑی مقدار میں منشیات پکڑے جانے کا نتیجہ یہ نکلا کہ اس کے فوری بعد بنکاک اور کئی دیگر بڑے ایشیائی شہروں میں ان نشہ آور گولیوں اور کرسٹل میتھ کی قیمتیں بہت زیادہ ہو گئیں۔ م م / ع ب (اے ایف پی)

مزید پڑھیں
بصیرت آن لائن

نیپال کی راشٹریہ سبھاکے رکن منتخب ہونے پرمولانامحمدخالدصدیقی کوعلمائے مدھوبنی کی مبارکباد

نیپال کی راشٹریہ سبھاکے رکن منتخب ہونے پرمولانامحمدخالدصدیقی کوعلمائے مدھوبنی کی مبارکباد
  • 11m
  • 00

مدھوبنی(پریس ریلیز)پڑوسی ملک نیپال کے معروف عالم دین ،جمعیۃ علماء نیپال کے قومی صدرمولانامحمدخالدصدیقی کے راشٹریہ سبھاکے رکن منتخب ہونے پرمدھوبنی کے علماء نے انہیں دل کی گہرائیوں سے مبارکبادپیش کی ہے۔اس موقع پرمدھوبنی شہرکے قاضی شریعت قاضی محمدامداداللہ قاسمی نے اپنے پیغام میں کہاکہ نیپال کے مسلمانوں کی یہ خوش قسمتی ہے کہ انہیں مولامحمدخالدصدیقی جیسامخلص اورباحوصلہ قائد ملاہے،راشٹریہ سبھاکے لئے ان کاانتخاب صرف نیپال کے مسلمانوں کے لئے ہی نہیں بلکہ ہندوستان میں ان کے چاہنے والوں کے لئے بھی انتہائی مسرت کی خبرہے اوران کے اس انتخاب پرہم پورے علمائے مدھوبنی کی جانب سے دل کی عمیق گہرائیوں سے مبارکبادپیش کرتے ہیں اوردعاکرتے ہیں کہ اللہ ان سے مزیدکام لے ۔اس موقع پربصیرت آن لائن کے چیف ایڈیٹرمولاناغفران ساجدقاسمی نے کہاکہ مولانامحمدخالدصدیقی کی شخصیت صرف نیپال کے لئے ہی نہیں بلکہ ہندوستان سمیت دنیاکے متعددممالک میں کسی محتاج تعارف نہیں ہیں،وہ بیک وقت بہترین عالم دین،اعلیٰ درجہ کے مقرر،مصنف اورمخلص ملی رہنماہیں۔نیپال کے مسلمانوں کوحکومت میں مناسب نمائندگی دلانے کے لئے انہوں نے ہمیشہ جدوجہدکی اوراسی کانتیجہ ہے کہ نیپال کی تاریخ میں پہلی بارنیپال کے ایوان بالایعنی راشٹریہ سبھامیں ایک مسلمان اوروہ بھی ایک بلندپایہ عالم دین کوجگہ ملی یہ یقینانیپال کے مسلمانوں کے ساتھ ساتھ پڑوسی ملک ہندوستان اوردیگرممالک کے مسلمانوں کے لئے بھی فخرکی بات ہے۔مولاناخالدصدیقی کی اس تاریخ سازکامیابی پرہم انہیں دل کی گہرائیوں سے مبارکبادپیش کرتے ہیں اورامیدکرتے ہیں کہ وہ آئندہ بھی نیپال کی سیاست میں اسی طرح مسلمانوں کی مضبوط آوازبنے رہیں گے اورمسلمانوں کی کامیاب نمائندگی فرمائیں گے۔مولانامحمدخالدصدیقی کی تاریخ سازکامیابی پرمدھوبنی کے علماء نے انہیں مبارکبادپیش کی ہے ۔مبارکبادپیش کرنے والوں میں دارالعلوم وقف دیوبندکے سابق استاذمولانارضوان احمدقاسمی بینی پٹی،مدرسہ چشمہ فیض ململ کے مہتمم مولانافاتح اقبال ندوی قاسمی ،مفتی محمدروح اللہ قاسمی استاذمدرسہ فلاح المسلمین مدھوبنی،مولانامحمدنصراللہ قاسمی مدرسہ اصلاح المومنین بینی پٹی،مولاناعنایت اللہ ندوی اینگلوعربک اسکول میگھون،مفتی مسیح احمدقاسمی مدرسہ فلاح المسلمین مدھوبنی،مولوی نفیس اختراسسٹنٹ ایڈیٹربصیرت آن لائن ،مفتی محمداللہ قیصرقاسمی،مولاناعبدالناصرسبیلی اجرا،مولانامحمدمرتضی قاسمی مدھوبنی،مولانامحمدشاہدقاسمی مکیہ،قاری اسجدزبیرپروہی وغیرہ قابل ذکرہیں۔

مزید پڑھیں
بصیرت آن لائن

مُسلسل دو جمعہ کے بعد سماجی کارکن صابر قاسمی کی کوششوں سے لیزر ویلی پارک سیکٹر 29 میں جمعہ کی نماز شروع

مُسلسل دو جمعہ کے بعد سماجی کارکن صابر قاسمی کی کوششوں سے لیزر ویلی پارک سیکٹر 29 میں جمعہ کی نماز شروع
  • 11m
  • 00

گوڑگاؤں(پریس ریلیز) گوڑگاؤں کے سیکٹر 29 لیزر ویلی پارک میں مسلسل دو ہفتہ سے جمعہ کی نماز ادائیگی پر بندش لگی ہوئی تھی ۔پولس انتظامیہ نے کووڈ کیسز میں اضافہ کا حوالہ دیکر یہاں دو ہفتہ سے نماز بند کرادی تھی، جبکہ لیزر ویلی پارک میں ادا کی جا رہی نماز ان 6 مقامات میں سے ایک ہے، جن کی اجازت ضلع انتظامیہ نے دی ہوئی ہے۔ واضح رہے کہ لیزر ویلی پارک سیکٹر 29 نزدیک افکو چوک میٹرو اسٹیشن پر یہاں بڑی تعداد میں اہل اسلام کئی ہزار کی تعداد میں جمعہ کی نماز ادا کرتے آرہے ہیں، حالیہ دنوں میں اس مقام پر جمعہ کی نماز کی 4 سے لیکر 6 بار جماعت ہوتی رہی ہیں،گذشتہ دو ہفتے سے یہاں پر پولس انتظامیہ جمعہ کی نماز ادا کرنے کو لیکر پریشر بنائی ہوئی تھی، جس کے بعد مسلمانوں سے جبر واکراہ کے ساتھ نماز بند کرادی تھی، جمعہ کی نماز کو لیکر مسلمان اضطرابی کیفیت سے دو چار چل رہےتھے، تاہم گوڑگاؤں جمعہ معاملہ میں سرگرمی سے معاملے کی پیروی کر رہے سرگرم سماجی کارکن و جمعیۃ علماء ہریانہ کی ورکنگ کمیٹی کے اہم رکن نے جب اس معاملے میں پولس افسران سے ملاقات کر اس معاملے میں بات کی اور اپنی بات دلیل سے رکھتے ہوئے کہا کہ جب 6 میں سے پانچ مقامات پر کسی نہ کسی صورت میں نماز ادا کی جا رہی ہے تو ایک ہی جگہ پر بندش کیوں لگائی جاتی ہے، جبکہ یہ واحد وہ جگہ ہے جہاں پر کثیر تعداد میں بریلوی مکتبہ فکر کے لوگ نماز ادا کرتے آئےہیں، مولانا محمد صابر قاسمی نے اپنے اس موقف سے کہ یہ واحد جگہ ہے جہاں بریلوی لوگ نماز ادا کرتے رہے ہیں، پولس انتظامیہ کو اس بات سے آگاہ کر قائل کرالیا، جس کے بعد آج تین بار جمعہ کی نماز کی جماعت ہوئی اور سینکڑوں فرزندان توحید نے جمعہ کی نماز ادا کی ، اس سلسلہ میں مولانا صابر قاسمی نے لیزر ویلی پارک میں نماز ادا کرانے کے منتظم و ذمہ دار توقیر علوی کو ساتھ لیکر پیر کو ڈی سی پی ایسٹ مقصود احمد سے ملاقات کی تھی جبکہ کل دیر شام ڈی سی پی ویسٹ دیپک سہارن سے اس سلسلے میں تفصیلی بات چیت کی اور اس طرح بر وقت موثر اقدامات و کوششوں سے لیزرویلی پارک میں نماز جمعہ ادا کرانے میں کامیابی ملی ،جس سے اہل اسلام نے راحت کی سانس لی۔

مزید پڑھیں

No Internet connection