Monday, 25 Jan, 8.11 am Qaumi Awaz

صفحہ اول
پریڈ کے لئے کسانوں کی زبردست تیاریاں، 20 کلو میٹر تک ٹریکٹر اور ٹرالیوں کی چھاؤنی

قومی شاہراہ نمبر 44 پر کنڈلی بارڈر سے انبالہ تک سنیچر کو پورے دن ٹریکٹروں کی لمبی قطاریں لگی رہیں اور جس سے ظاہر ہے کہ کسان تنظیموں نے ٹریکٹر پریڈ کے لئے زبردست تیاریاں کی ہوئی ہیں ۔پنجاب اور ہریانہ سے تقریبا 20 ہزار ٹریکٹروں کے آنے سے اتوار کو شاہراہ پر کنڈلی سے بہال گڑھ تک تقریبا 20 کلو میٹر تک ٹریکٹر اور ٹرالیوں کی چھاؤنی بن گئی ہے۔ عالم یہ ہے کہ کنڈلی۔ مانیسر ۔پلول (کے ایم پی) اور کنڈلی۔ غازی آباد پلول (کے جی پی) کے زیرو پوائنٹ بھی ٹریفک کے لئے بند ہوگئے ہیں۔ روٹ بدلنے اور گاڑیوں کو ادھر ادھر پاس کرانے میں پولس کاسردیوں میں پسینہ چھوٹ رہا ہے۔

خاص بات یہ ہے کہ ٹریکٹر پریڈ کے لئے پہنچنے والے نوجوان کسانوں اور خواتین کا جنون اور جذبہ دیکھتے ہی بن رہا ہے۔ کسانوں نے کے ایم پی پر قبضہ کرلیا ہے اور دن بھر ریہرسل کررہے ہیں۔کچھ بھاری گاڑیاں ہی کے ایم پی۔ کے جی پی سے گزر رہی ہیں۔ چونکہ نیچے میلہ ہے اور میلے میں ہر طرف ترنگا نظر آرہا ہے۔

کنڈلی سے بہال گڑھ کے درمیان میں تقریبا 45 ہزار ٹریکٹروں کا اجتماع ہے اور دو لاکھ سے زیادہ کسان جمع ہوچکے ہیں۔ٹریکٹر پریڈ کے لئے ٹریکٹروں کی بڑھتی تعداد پر غور کرتے ہوئے سونی پت انتظامیہ نے 28 جنوری تک دہلی میں آمدورفت نہیں کرنے کا مشورہ دیا ہے۔ ساتھ ہی سونی پت کے تمام اسکولوں اور کالجوں میں پیر کو تعطیل کا اعلان کردیا گیا ہے۔

یوم جمہوریہ کے موقع پر سونی پت پولیس نے کسانوں کی ٹریکٹر پریڈ سے متعلق ٹریفک روٹ ایڈوائزری جاری کی ہے۔ اس کے تحت راہگیروں سے درخواست کی گئی ہے کہ وہ 28 جنوری تک کے جی پی-کے ایم پی کا استعمال نہ کریں۔ اسی طرح این ایچ 44 پر بھاری گاڑیاں جموں و کشمیر ، ہماچل پردیش ، پنجاب اور چندی گڑھ سے آنے والی گاڑیاں سونالی سے شاملی کے راستے غازی آباد اور نوئیڈا جا سکتی ہیں اور پانی پت سے سنولی کے راستے غازی آباد ، نوئیڈا جاسکتی ہیں۔

کسانوں کی ٹریکٹر پریڈ کے اعلان کے پیش نظر انتظامیہ نے عام لوگوں سے اپیل کی ہے کہ وہ 26 سے 28 جنوری تک دہلی جانے سے گریز کریں۔ اگر کوئی بہت اہم کام ہے تو پھر متبادل راستے اپنائیں۔ 26 جنوری کو یوم جمہوریہ کے موقع پر کسانوں نے دہلی میں ٹریکٹر پریڈ کرنے کا اعلان کیا ہے۔ اس میں سونی پت کے کسان بھی شامل ہوں گے۔ انتظامیہ نے اس سلسلے میں ایک میٹنگ کی ہے۔

میٹنگ میں ڈی سی شیام لال نے سول سرجن کو خصوصی طور پر موٹر سائیکل ایمبولینسوں کے انتظامات کرنے کی ہدایت دی ہے۔ گاڑیوں کی کثیر تعداد کی وجہ سے جام کی صورتحال پیدا ہوسکتی ہے۔ ایسی صورت میں اگر کسی جام سے گزرنے کے بعد کسی کو طبی سہولیات کی فراہمی کی ضرورت ہو تو موٹر سائیکل ایمبولینس کارآمد ہوگی۔ انہوں نے کار ایمبولینسوں کی تعداد بڑھانے کی بھی ہدایت دی ہے۔

Dailyhunt
Disclaimer: This story is auto-aggregated by a computer program and has not been created or edited by Dailyhunt. Publisher: Qaumiawaz urdu
Top