Friday, 22 Jan, 3.03 am بصیرت آن لائن

سرورق
کسان تحریک: کسانوں نے ٹھکرائی حکومت کی تجویز، کہا زرعی قوانین ردہونے سے کم منظورنہیں

نئی دہلی،21جنوری(بی این ایس )
دہلی کی سرحدوں پر تین نئے زرعی قوانین کے خلاف کسانوں کا احتجاج آج مسلسل 57 ویں روز بھی جاری ہے۔ ادھر کسان تنظیموں نے بدھ کے روز حکومت کی طرف سے دی گئی تجویز کو مسترد کردیا ہے۔جوائنٹ کسان مورچہ نے ایک بیان جاری کرتے ہوئے کہاکہ کل کی حکومت کی جانب سے پیش کردہ تجویز کو مسترد کردیا گیا ہے۔ تینوں مرکزی زرعی قوانین کو مکمل طور پر منسوخ کرنے اورتمام کسانوں کے لئے تمام فصلوں پر منافع بخش ایم ایس پی پر قانون بنانے کی بات کو اس تحریک کے اہم مطالبات کے طور پردہرایاگیا۔بتادیں کہ بدھ کے روز کسانوں اور حکومت کے مابین دسویں راؤنڈ میٹنگ ہوئی۔ اس میٹنگ میں مرکزی حکومت نے مشتعل کسان تنظیموں کے سامنے ایک نئی تجویز پیش کرتے ہوئے کہا تھا کہ وہ ڈیڑھ سال کے لئے زرعی قوانین ملتوی کرنے کے لئے تیار ہے۔ اس دوران حکومت اور کسان تنظیموں کے نمائندوں کی کمیٹی ان قوانین پر تفصیل سے بات کرے گی اور اس کا کوئی راستہ تلاش کرے گی۔حکومت کی تجویز پر کسان تنظیموں کا کہنا تھا کہ جمعرات کو ایک دوسرے سے تبادلہ خیال کرنے کے بعد وہ آئندہ میٹنگ میں حکومت کو اپنے فیصلے کے بارے میں معلومات دیں گے۔ اگلی میٹنگ جمعہ (22 جنوری) کو دوپہر 12 بجے ہوگی۔ آج کسانوں کی تنظیموں کی میٹنگ ہوئی اور اس میٹنگ میں کسان یونین نے حکومت کی تجویز کو مسترد کرنے کا فیصلہ کیا۔

Dailyhunt
Disclaimer: This story is auto-aggregated by a computer program and has not been created or edited by Dailyhunt. Publisher: Baseerat Online
Top